Before News

We've updated our page, now you can send us your poetry here: Add Your Poetry

Aug 11, 2012

Aey Hum Sukhan Wafa Ka Taqaza Hai Ab Yehi - Nasir Kazmi

Love Poetry

Roman Urdu Script - Love Poetry

Aey hum sukhan wafa ka taqaza hai ab yehi,
Mein apne hath kaat lon, tu apne hont see..

hum sukhan= Friend; taqaza= Requirement;

Kin be-dilon mein phaink diya hadsaat ne,
Aankhon mein jin ki noor na baaton me taazgi..

hadsaat= Accidents

Bol aey mere diyaar ki soi hui zameen,
Mein jin ko dhoondta hun kahan hain wo aadmi?

diyaar= homeland; aadmi= men;

Meethe the jin ke phal, wo shajar kat kata gaye,
Thandi thi jis ki chaaon wo deewar gir gai..

Meethe= sweet; phal= fruits; chaaon= shade; deewar= wall

Bazaar band, raaste sunsan, be-chiraagh,
Wo raat hai ke ghar se nikalta nahi koi…

Bazaar=  Markets; sunsan= lonely; be-chiraagh= without lamp;

‘Nasir’ bohat si khuwahishain dil me hain be-qarar,
Lekin kahan se laaon woh be-fikar zindagi…

Khuwahishain= wishlists; 

by: Nasir Kazmi

Urdu Script - Love Poetry

اے ہم سخن وفا کا تقاضا ہے اب یہی
میں اپنے ہاتھ کاٹ لوں، تو اپنے ہونٹ سی


کن بے دلوں میں فیک دیا حادثات نے
آنکھوں میں جن کی نور نہ باتوں میں تازگی


بول اے مرے دیار کی سوئی ہی زمیں
میں جن کو ڈھونڈتا ہوں کہاں ہیں وہ آدمی


میٹھے تھے جن کے پھل، وہ شجر کٹ کٹا گئے
ٹھنڈی تھی جس کی چھاؤں وہ دیوار کٹ گئی


بازار بند، راستے سنسان، بے چراغ
وہ رات ہے کے گھر سے نکلتا نہیں کوئی


ناصر بوہت سی خواہشیں دل میں ہیں بے قرار
لیکن کہاں سے لاؤں وو بے فکر زندگی
Add Your Poetry

Do you Like this Poetry..?

Get Latest Sad Poetry Daily!

Follow us!